Home Kashmir News Geo MUST

Geo MUST

79
SHARE

میرپور(جیو پاک نیوز) مسٹ یونیورسٹی کا ایک اور بڑا سکینڈل ۔۔۔؟
ہر کام میں بدنیتی ، ڈائریکٹر ورکس اور ڈائریکٹر اسٹیٹ نے چیرمیں بزنس ڈیپارٹمنٹ ڈاکٹر خلیق کے مشورے پہ بزنس ڈیپارٹمنٹ کی بلڈنگ کے  اوپر عارضی کمرہ تعمیر (فائبر کا)کیا جس کی لاگت 87 لاکھ روپے آئی ۔ وہ بھی عارضی کمرہ۔ جس کی پیداری کا یہ عالم ہے کہ بارش اگر جہلم میں ہو تو چھت اس کی ٹپکنا شروع ہو جاتی ہے۔یہ ظلم نہں تو اور کیا ہے پہلے تو سوال یہ ہے کہ آخر عارضی کمرہ کیوں۔۔۔؟

مسٹ کا چھپر( فائبر کا کمرہ

کیا جلدی کہیں جانا ہے ۔یہ ادارہ ہے جس کو سالوں رہنا ہے مگر افسوس کچھ خودغرض لوگ اپنے مفاد کی خاطر ادارے کو لاکھوں کی پھکی دے جاتے ہیں۔
اور دوسری طرف مسٹ میں قاہم اسٹیٹ اف دی آرٹ نواب کیفے اس کی لاکت کا تخمینہ مسٹ کی قابل انتظامیہ نے ۳۴ لاکھ لگایا اور اپنی فائبر کی چھپر کا ۸۷ لاکھ ۔ اساں نہ کُتا کُتا ۔ تہ توساں نہ کُتا ٹامی۔
لمحہ فکریہ ہے کرپشن کے اُستاد کس کس ڈھنگ سے پیسے بنا رے ہیں۔
صدر ریاست اور پرائم منسٹر صاحب سے التجاء ہے کہ ان کے خلاف کروائی کی جائے ۔

نواب کیفے

SHARE