Home Bhimber News Geo VC MUST

Geo VC MUST

91
SHARE

فاروق احمد کا کہنا تھاکہ میں وی سی مسٹ راجہ حبیب الرحمان کو چیلنج کرتا ہوں کہ اگر ثابت کر دیں کہ نواب کیفے غیر قانونی ہے تو جو سزا دیں گے منظور ہے

غیر قانونی نواب کیفے کا افتتاح صدر ریاست ضلعی اور یونیورسٹی انتظامیہ کے ساتھ کرتے ہویے

میرپور ( جیو پاک نیوز ) وائس چانسلر مسٹ راجہ حبیب الرحمان ذاتی بُغض میں حقائق نہ جھٹلاہیں۔ان کے خلاف کرپشن اقربا پروری ، ٹمپرنگ ، مالی بددیانتی کے کیسز پہلے ہی عدالتوں میں زہرکار ہیں۔شہریوں کی طرف سے انکے خلاف مظاہرے میں میرا کوئی کردار نہں۔ نواب کیفے کو غیرقانونی کہنا زیادتی ہے۔مسٹ یونیورسٹی کو سٹیٹ آف دی آرٹ کیفے تعمیر کر کے اُس وقت دیا جب یہ لوگ چھپر نما ڈربے میں بیٹھ کر ٓچاہے پیا کرتے تھے ۔اب تو کانی بھی سُرما ڈالتی ہے۔

جس کا افتتاح صدر ریاست سردار یعقوب خان نے کیا۔راجہ حبیب الرحمان اپنے خلاف احتجاج کو مجھ سے منسوب کر کے اپنی کرپشن پہ پردہ ڈالنے کی کوشش نہ کریں۔برطانیہ سے اپنی ساری جمع پونجی لگا کے کیفے تعمیر کیا جو پورے قانونی طریقے سے بنا۔راجہ حبیب الرحمان نے ذاتی بُغض عناد اور اقربا پروری جسکی وجہ سے انہں ستارہ امتیاز بھی مل چکا ہےمیرا کروڑوں کا نقصان کر دیا۔ اگر نواب کیفے غیرقانونی تھا تو پھر اُس وقت کا وی سی۔ رجسٹرار ۔ڈایرکٹر ورکس۔ ڈایرکٹراسٹیٹ اور ڈایرکٹر فنانس سب قصور وار ہیں ۔ 

فاروق احمد کا کہنا تھاکہ میں وی سی مسٹ راجہ حبیب الرحمان کو چیلنج کرتا ہوں کہ اگر ثابت کر دیں کہ نواب کیفے غیر قانونی ہے تو جو سزا دیں گے منظور ہے ۔ کیفے کی تعمیر کے لیے مسٹ نے باقاعدہ ٹینڈر دیا تھاجس کے بعد تمام مراحل یونیورسٹی حکام کی نگرانی اور قانونی تقاضوں کی تکمیل کے بعد کیفے کا قیام عمل میں آیا ۔ نواب کیفے کا افتتاح صدر ریاست سردار یعقوب خان نے کیا تھا اس دوران تمام ضلعی اور مسٹ یونیورسٹی انتظامیہ موجود تھے ۔ پھر کس طرح راجہ حبیب الرحمان نواب کیفے کو غیر قانونی کہ رہے ہیں ۔ جس کا ان کے پاس کوئی ثبوت یا حقیقت سے کوئی تعلق نہں ۔ حقیقت یہ ہے کہ اتنے بڑے عہدے پہ راجہ حبیب الرحمان جیسے شخص کی تعناتی نہ صرف تعلیمی ادارے بلکہ طلبا کے مستقبل اور ریاست کے ساتھ کھلواڑ ہے ۔ فاروق احمد کا کہنا تھا کہ اپنے خاندان کے درجنوں افراد کی مسٹ میں تقرری، میرٹ کے قتل عام، کرپشن ، اپنی اہلیہ ، بیٹیوں، دامادوں اور اُن کے بہنوئی سب کی بھرتی کا ذمہ دار بھی نواب کیفےکو سمجھتے ہیں ۔ وہ موجودہ حکومت اور صدر ریاست  اور عوام کو کب تک بےوقوف بناتے رہیے گے۔ کیا احتساب عدالتوں میں بھی درجن بھر کیسز فاروق احمد مالک نواب کیفے کی وجہ سے ہیں ۔ حیرت اس بات پہ ہے کہ ریاست کے اتنے بڑے ادارے کی تبائی پہ ذمہ دار حکومت خاموش تماشائی بنی بھیٹی ہے۔ مزید فاروق احمد کا کینا تھا کہ برطانیہ سے سرمایہ کاری وطن عزیز لانے پہ جہاں صدر ریاست نے صدارتی ایوارڑ سے نوازا ۔۔ اور دوسری طرف وی سی مسٹ اس کو غیر قانونی کہتا ہے ۔جو صدر ریاست کی توہین ہے بلکہ حقائق چھپانے کی بھونڈی سازش ہے۔ 

SHARE